.
.
.
.

امن معاہدے برقرار رکھیں گے:صدر مُرسی کا اسرائیلی ہم منصب کو مکتوب

اسرائیلی صدر کا رمضان المبارک کی آمد پر تہنیتی پیغام۔ٹویٹر کے ذریعے دیا گیا

نشر في:


مصر کے صدر ڈاکٹر محمد مُرسی نے اپنے اسرائیلی ہم منصب شمعون پیریز کے نام ایک تازہ مکتوب میں یقین دلایا ہے کہ ان کی حکومت خطے میں دیر پا امن کےقیام کے لیے پڑوسی ممالک کےساتھ تعاون جاری رکھے گی۔ ان کا کہنا ہے کہ قاہرہ فلسطین اور اسرائیل کے درمیان امن بات چیت کو آگے بڑھانے میں معاونت کے لیے تیار ہے۔ نیز دونوں ملکوں کےدرمیان ماضی میں طے پائے امن سمجھوتے برقرار رہیں گے۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی‘‘اے ایف پی’’ کےمطابق مصری صدر کا اپنے اسرائیلی ہم منصب کے ساتھ یہ پہلا تحریری رابطہ ہے۔ قبل ازیں صہیونی صدر شمعون پیریز نے رمضان المبارک کی آمد پر مصری صدر کے لیے تہنیتی پیغام میں نیک تمناؤں کا اظہار کیا تھا۔

رپورٹ کےمطابق صدر محمد مرسی کی جانب سے شمعون پیریز کےنام تحریر کردہ مراسلے میں کہا گیا ہے کہ ‘‘مصر مشرق وسطیٰ میں دیر پا امن کے قیام کی مساعی میں ہر ممکن تعاون اور مدد کی فراہمی کے لیے تیار ہے۔ مصر کی کوشش ہے کہ خطے کی تمام اقوام امن اور استحکام کے ساتھ آگے بڑھیں اور ان کے باہمی تنازعات کا بات چیت کے ذریعے حل تلاش کیا جائے’’۔

قبل ازیں اسرائیل کے امن نوبل انعام یافتہ صدر شمعون پیریز نے صدر محمد مرسی کے نام ایک مکتوب بھیجا تھا جس میں انہوں نے محمد مرسی کو مصر کے صدر منتخب ہونے پر مبارک باد پیش کی تھی۔ اسرائیلی صدر نے اپنے مکتوب میں مصر کے نو منتخب صدر کو تل ابیب اور قاہرہ کے درمیان تین عشروں سے چلے آرہے دوستانہ تعلقات کی جانب توجہ دلائی تھی اور ساتھ ہی لکھا تھا کہ اسرائیل اپنے پڑوسی مسلمان ملک مصر کے ساتھ ماضی میں طے پائے تمام امن معاہدوں کی پاسداری کا خواہاں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ مصر اور اسرائیل کے درمیان دوستانہ تعلقات دونوں قوموں کے روشن مستقبل کی ضمانت اور امن واستحکام کے لیے ضروری ہیں۔

اسرائیلی صدر کی جانب سے دوسرا مکتوب رمضان المبارک کے موقع پر مصری صدر کو لکھا گیا، جس میں انہیں ماہ مقدس کی آمد کی مبارک باد دی گئی تھی۔

خیال رہے کہ مصر میں ملک کی سب سے بڑی مذہبی سیاسی جماعت اخوان المسلمون کے برسراقتدار آنے کے بعد اسرائیل کو سابقہ امن معاہدوں کے تسلسل میں سخت قلق کا سامنا ہے۔ صہیونی حلقے یہ خیال ظاہر کر رہے ہیں کہ مصر میں اخوان المسلمون کے صدر اور ان کی حکومت ماضی کے امن معاہدوں کو کالعدم قرار دے سکتی ہے۔

تاہم میڈیا پر خبر نشر ہونے کے بعد مصری ایوان صدر سے اسرائیل کی جانب سے رمضان المبارک کے موقع پر کسی قسم کے تہنیتی پیغام کے وصول ہونے کی تردید کی ہے۔ البتہ مصری صدر ڈاکٹر محمد مرسی نے اسرائیلی ہم منصب کو ایک مراسلے کے ذریعے دونوں ممالک کے درمیان دیرینہ تعلقات قائم رکھنے کے عزم اور خواہش کا اظہار کیا ہے۔
نوبل امن انعام یافتہ صدر نے اپنے عبرانی زبان میں تحریر کردہ مکتوب کی نقل ٹویٹر پر بھی شائع کی ہے۔